Nankana Sahib: A Sikh girl converted to Islam and married a Muslim

Nankana Sahib: A Sikh girl converted to Islam and married a Muslim

ننکانہ صاحب میں رہنے والے ایک سکھ خاندان کی بیٹی رجمیت کور نے اپنے ہمسائے جنید سے شادی کر لی۔ اس سے پہلے اس نے جڑانوالہ کی ایک مسجد میں اسلام قبول کیا اور وہیں ان کا نکاح پڑھوا دیا گیا۔ رجمیت کور نے مسلمان ہونے پر اپنا نام جنت بی بی رکھا۔

ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق اپنے شناخت خفیہ رکھنے کی شرط پر ایک سکھ شہری نے بتایا کہ رجمیت کور اور جنید دونوں ایک دوسرے کو چاہتے تھے وہ پہلے بھی اپنے گھر والوں کی مرضی کے بغیر گھر چھوڑ کر چلی گئی تھی تاہم مقامی شخصیت کی مداخلت پر لڑکی کو واپس اس کے والدین کے حوالے کر دیا گیا تھا۔

رجمیت کور7 دسمبر کی رات کو اپنے گھر سے گئی اس نے جڑانوالہ کی ایک مقامی مسجد میں اسلام قبول کیا اور اپنے لیے جنت بی بی نام کا انتخاب کیا۔ اس کے بعد جنید اور جنت میں نکاح کرا دیا گیا۔ لڑکی نے والدین کے خوف سے تحفظ کیلئے عدالت میں درخواست دائر کی۔ جس پر ننکانہ صاحب اور فیصل آباد کی انتظامیہ نے نوبیاہتا جوڑے کو اپنی تحویل میں لے لیا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق جنت بی بی (رجمیت کور) اپنے شوہر جنید کے ساتھ جانے پر بضد ہے جب کہ والدین لڑکی کے اس فیصلے کے خلاف ہیں جس پر انتظامیہ نے لڑکی کو دارالامان لاہور منتقل کر دیا ہے۔

دوسری جانب سکھ مذہب کے لاہور سے تعلق رکھنے والے اہم رہنما نے اس معاملے پر بیان دیا ہے کہ وہ اس معاملے کوخوش اسلوبی سے حل کرنے کی کوشش کریں گے لیکن حقیقت یہ ہے کہ لڑکی بالغ ہے اوراپنی رضامندی سے اس نے اسلام قبول کرکے شادی کی ہے۔ اگراسے زبردستی اغوا کرکے جبری مذہب تبدیل کروایا جاتا توپھر وہ اس کے حق میں آواز اٹھاتے۔

ادھر رجمیت کور کے والد رنجیت سنگھ نے مقامی برادری سے مدد طلب کی ہے جنہوں نے اس معاملے کو مقامی مسلم بزرگوں کے ساتھ اٹھایا ہے لیکن اس کا کوئی حل نہیں نکل سکا۔ اس سے قبل بھی اسی خاندان کی ایک لڑکی نے اسلام قبول کر کے مسلم نوجوان سے شادی کی تھی۔

Rajmeet Kaur, daughter of a Sikh family living in Nankana Sahib, married her neighbor Junaid. Earlier, he converted to Islam in a mosque in Jaranwala and his marriage was solemnized there. Rajmit Kaur changed her name to Janat Bibi after becoming a Muslim.

According to the Express Tribune, on condition of anonymity, a Sikh resident said that Rajmeet Kaur and Junaid both wanted each other. She had left the house without the consent of her family. Was returned to his parents.

Rajmit Kaur left her home on the night of December 7, converted to Islam at a local mosque in Jaranwala and chose the name Janat Bibi for herself. After that, the marriage was solemnized in Junaid and Jannat. The girl filed a petition in the court seeking protection from her parents. On which the administration of Nankana Sahib and Faisalabad took the newlyweds into their custody.

According to media reports, Janat Bibi (Rajmit Kaur) is adamant to go with her husband Junaid while the parents are against the decision of the girl on which the administration has transferred the girl to Darulaman Lahore.

On the other hand, a prominent Sikh leader from Lahore has stated that he will try to resolve the issue amicably, but the fact is that the girl is an adult and she voluntarily converted to Islam and got married. Is. If he had been abducted and forcibly converted, they would have spoken out in his favor.

Meanwhile, Rajmeet Kaur’s father Ranjit Singh has sought help from the local community who have raised the issue with the local Muslim elders but no solution has been found. Earlier, a girl from the same family had converted to Islam and married a Muslim youth.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *